Forum Pakistan
New User? Register | Search | Memberlist | Log in
Forum Pakistan - Pakistani Forums
Pakistani forum to discuss Pakistani Media, Siasat, Politics Talk Shows, Khaber Akhbar, Khel, Cricket, Film, Dramas, Songs, Videos, Shairy, Shayari, Pyar Mohabbat ki Kahani, Tourism, Hotels, Fashion, Property, Naukary Gupshup and more.
Watch TV OnlineLive RadioListen QuranAkhbarFree SMS PakistanResults OnlineUrdu EditorLollywoodLive Cricket Score
Government DepartmentsKSE Live RatesUseful LinksJobsOnline GamesCheck EmailPromote us
GEO News LiveGEO NewsDawn News Live TVExpress News

ForumPakistan.com

Bookmark site!


Stories Behind Words: Lets Find Out


Bookmark and Share
 
Reply to topic    Forum Pakistan - Pakistani Forums Home » Stories & Quotes
Stories Behind Words: Lets Find Out
Author Message
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Stories Behind Words: Lets Find Out
Salam Brother & Sisters!

To increase our knowledge about words in different languages:
Different words in common have different story behind:
So lets find out: I'll post some,
You can also post, if u know something:


لفظ ہے: ڈبل کراس

ڈبل کراس کا لفظی مطلب تو یہی ہے کہ کلیساؤں وغیرہ پر لگائی جانے والی صلیبیں جو بعض اوقات دہری بنائی جاتی ہیں۔ لیکن اس کا محاورے والے مطلب سے کوئی واسطہ نہیں جس کے حساب سے یہ دھوکہ بازی کے مفہوم میں برتا جاتا ہے۔ لیکن یہ کسی عام بددیانتی کی طرف اشارہ نہیں بلکہ عیاری اگر ایسے شخص کی جانب سے ہو جو پہلے آپ کا ساتھی تھا تو آپ کہیں گے اس نے مجھے ڈبل کراس کیا ہے۔

لیکن اس جدید محاورے کی تاریخ جاننے کے لئے ہمیں پہلے تو لفظ کراس کا جائزہ لینا ہوگا۔ سترہویں صدی سے اس کے مفاہیم میں ایک مطلب یہ بھی شامل ہے کہ جب کوئی معاملہ واضح، دیانتدارانہ، دو ٹوک اور منصفانہ، )یعنی انگریزی محاورے میں Square )، نہ ہو تو اسے Cross کہتے۔ یہ زیادہ تر کھیلوں کے سلسلے میں استعمال ہوتا۔ انیسویں صدی میں اسکا مطلب تھا اگر دو کھلاڑیوں جیسے باکسروں میں کسی ایک کو پیسے دئے جائیں تاکہ وہ ہار جائے لیکن پیسے لینے کے بعد وہ مد مقابل کی پٹائی کر دے تو اسے ڈبل کراس کہا جانے لگا یعنی رقم بھی لے لی اور مقابلہ بھی جیت لیا۔

ڈبل ڈِیلنگ، فئیر اینڈ سکوئر ڈیِلنگ کا الٹ ہے۔

اسی طرح دوسری جنگ ِ عظیم کے دوران برطانیہ میں سرکاری طور پر ڈبل کراسنگ کی اجازت دی گئی۔ اور فوج کر جانب سے 20 Committee قائم کی گئی جو جرمنی کی خفیہ سرگرمیوں کے توڑ کے لئے بنائی گئی تھی اور جسکی سربراہی جان ماسٹر مین نے کی۔ اسکے نام میں جو ہندسے استعمال کئے جاتے ان میں رومن ہونے کے باعث دو ایکس یا کراس ہوتے اور یوں اس پروگرام کے تحت جرمن جاسوسوں کو مجبور کیا جاتا کہ وہ برطانیہ کے لئے ڈبل ایجنٹ کا کام کریں۔ انہیں ایسی پیشکش کی جاتی کہ جس سے وہ انکار کر ہی نہ سکتے اور وہ یہ تھی کہ جرمنی کوغلط معلومات بھیجو ورنہ تمہیں گولی مار دی جائے گی۔

بعد میں جان ماسٹر مین نے 1972 میں جب اپنی کتاب شائع کی تواسکے بعد ڈبل کراس اور ڈبل ایجنٹ کی اصطلاحات عام بول چال میں استعمال ہونے لگیں۔ کتاب کا نام ہے: The Double-Cross System in the War of 1939-1945


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:09 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

By hook or by crook Reply with quote
By hook or by crook

بہت جانا پہچانا محاورہ ہے۔ ہے نا؟ جیسا کہ اس کے استعمال سے ظاہر ہوتا ہے اس کا مطلب ہے اپنے مقصد کے حصول کے لئے ہر جائز ، ناجائز حربہ استعمال کرنا۔ہُک تو کھونٹی کو کہا جاتا ہے اور کروک کسی ٹیڑھی شے کو یا پھر بددیانت شخض کو بھی کہتے ہیں تو پھر کیا یہ سمجھا جائے کہ اس لفظ کے باعث اس محاورے کا بے ایمانی یا نا انصافی سے تعلق ہے؟

سب سے پہلے تو یہ سمجھ لیں کہ ہُک کا مطلب ہے بِل ہُک یعنی ایسا اوزار جو درانتی سے ملتا جلتا ہے مگر درانتی کا دندانوں والا حصہ لمبا ہوتا ہے جبکہ بل ہک کا دستہ لمبا اور بلیڈ ہوتا ہے کند اورچھوٹا، اور پھروہ ہک کی شکل میں ٹیڑھا بھی ہوتا ہے اور اسے جھاڑیوں وغیرہ کی صفائی کے لئے استعمال کیا جاتاہے۔ کند ہونے کے باعث وہ لکڑیاں وغیرہ کاٹنے کے کام نہیں آسکتا۔اور کروُک وہ لاٹھی ہے جو انگریزی کے حرف J سے ملتی جلتی ہے اور اسے گڈرئیے اپنے ریوڑ کو ہانکنے کے لئے استعمال کرتے ہیں۔

البرٹ جیک نے لفظوں کی اصل سے متعلق اپنی کتاب میں ا س محاورے کی بڑی دلچسپ تاریخ درج کی ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ جاگیرداری نظام کے تحت قرون ِ وسطیٰ میں انگلستان میں ایک قانون منظور ہوا جسکے مطابق جلانے کی لکڑی حاصل کرنے کے لئے درخت یا انکی شاخیں کاٹنا ممنوع قرار دیا گیا۔تاہم قانون میں علاقے کے غریبوں کے لئے یہ رعایت رکھی گئی تھی کہ وہ زمیں پر گری پڑی سوکھی شاخیں اٹھا سکتے ہیں اگر وہ اپنے ہک یا کروک کے ذریعے ان کو اکھٹا کر سکیں۔ تو یہ تھی اس محاورے کی بنیاد۔ بعد میں یہ ہر جائز ناجائز ہتھکنڈہ استعمال کرنے کے مفہوم میں برتا جانے لگا۔


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:11 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote
جنوری کا مطلب



جنوری کا لفظ انگریزی میں فرانسیسی سے آیا ہے جہاں یہ جانویئر تھا مگر پرانی فرانسیسی میں لاطینی سے پہنچا۔ لاطینی میں یہ تھا جنویرئس مینسِس یعنی جانس کا مہینہ۔جنوری کا مہینہ سال کا پہلا مہینہ ہونے کے باعث متبرک سمجھاجاتا۔ ۔جانس ابھرتے ڈوبتے سورج کا دیوتا تھا جسکا سر تو ایک مگر داڑھی بردار چہرے دو ہوتے،گویا وہ ایک چہرے سے سامنے اور دوسرے سے پیچھے کی طرف دیکھتا۔ جنوری کے مہینے میںیہ قابلیت ہوتی ہے کہ وہ پچھلے سال کو بھی دیکھ سکتا ہے کیونکہ دسمبر بالکل اسکے ساتھ ہی ہوتا ہے اور سامنے یعنی سالِ رواں کو بھی۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ اسکا یہ نام اسی نسبت سے رکھا گیا۔ Jenus دیوتا کے دو چہرے ہوتے ہیں اسی لئے منافق انسان کو janus faced بھی کہا جاتا ہے۔ تو بات ہور ہی تھی جنوری کی۔اس لفظ کی تاریخ میں آنے جانے، شروع اور اخیر ہونے کے معانی ملتے ہیں۔ ہند آریائی زبانوں میں اس سے ملتے جلتے کئی ایسے الفاظ ہیں جنکامطلب جانا سے ملتا جلتا ہے۔ سنسکرت میں کا مطلب ہے راستہ۔شاید اردو لفظ جانا اسی سے نکلا ہو۔
yanah


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:12 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote
ہاٹ ڈاگ


Hot dog

فرض کریں کہ آپ موسمِ گرمامیں امریکہ آتے ہیں اور بیس بال کی گیم دیکھنے پہنچ جاتے ہیں۔آپ سبز سبز میدان کو دیکھ رہے ہیں اور وہاں کی سرگرمیوں کو سمجھنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔ کہیں کسی نے گیند کو ہٹ لگائی تو اس ٹیم کے حامیوں نے اچھل اچھل کر اور خوشی سے چِلا چلا کر آسمان سر پر اٹھا لیا۔ادھر پاکستانی سینما گھروں کی طرح خوانچہ فروش یہاں بھی آوازیں لگارہے ہیں ۔ اچانک آپ کے کانوں میں Hot dogs کی آوازیں بار بار آنے لگتی ہیں اور آپ سوچتے ہیں کہ گرم کتے کون بیچ رہا ہے اور کیوں؟ پھر آپ کے میزبان بتاتے ہیں کہ یہ دراصل بیف کا بنا ہوا کباب ہے بند کے اندر رکھا ہوا۔یہ مقبول ترین امریکی کھانوں میں سے ایک ہے۔ویسے تو یہ کہیں بھی مل سکتا ہے مگر کھیلوں کے سٹیڈیم ان کا خاص ٹھکانہ ہیں۔ ان کے ساتھ کولڈ ڈرنک بھی پیش کئے جاتے ہیں

اب سوال یہ ہے کہ کھانے کی اتنی پسندیدہ شے کو ایسا نام کہا ں سے ملا۔ تو سنئے۔تقریباََ ایک سو سال پہلے امریکہ میں سڑکوں پر کباب بیچنے کا بڑا رواج تھا جیسا کہ آپ نے وطنِ عزیز میں ریلوے سٹیشنوں پر چائے گریم ، چائے گریم ، روٹی کباب، روٹی گریم کی آوازیں سنی ہونگی۔اسی طرح یہاں بھی hot, hot, hot, hot کے نعرے بلند کئے جاتے۔چنانچہ آہستہ آہستہ کبابوں کا نام ہی hot پڑ گیا۔ ماہرِ لسانیات ویب گیریسن کہتے ہیں کہ اسی زمانے میں جرمنی سے فریکفرٹرز درآمد ہونا شروع ہوئے جنکا یہ نام اسلئے رکھا گیا کہ ان کو لانے والا شخص جرمنی کے شہر فرینکفرٹ سے تھا۔اسی دور میں doggie کی اصطلاح وجود میں آئی ۔یہ دراصل putting on the dog محاورے کی چھوٹی شکل تھی جسکا مطلب تھا کوئی خوبصورت یا نمائشی چیز، مہنگی اور بڑی طرحدار۔فرینکفرٹرز کو ایسا اسلئے سمجھا جاتا کہ وہ باہر سے آئی ہوئی ، مہنگی اور انوکھی سی شے تھی۔چنانچہ انکا نام
hot dog
رکھ دیا گیا جو بعد میں
doggie hot
بن گیا۔


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:15 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote
پو یار


سوال: پپو یار تنگ نہ کر کا پس منظر کیا ہے۔

پپو یار تنگ نہ کر، عموماً رکشاؤں، ٹرکوں اور دوسری کمرشل گاڑیوں کے پیچھے لکھا رہتا ہے۔

۔شاید آپ کو معلوم ہوکہ مغربی ممالک میں ہارن بجانے کو بہت برا سمجھا جاتا ہے اور اگر واقعی کسی کی توجہ حاصل کرنے کی کوئی ایمرجنسی ہو تو بات الگ ہے وگرنہ خواہ مخواہ ہارن بجانے یا راستہ مانگے کے لئے اسکے استعمال کویہاں سخت ناپسند کرتے ہیں۔

مگر ہمارے ممالک میں ہارن بجانے کا بہت رواج ہے۔ویسے زندگی میں بھی اور سڑک پر بھی، جو پیچھے ہے وہ آگے نکلنا چاہتا ہے اور اپنے سے آگے والے انسان کو ہارن بجا بجا کر مجبور کرتا ہےکہ وہ اسکے راستے سے ہٹ جائے۔چنانچہ آگے والے کی جانب سے پپو کے لئے درخواست ہے کہ وہ تنگ نہ کرے۔رکشوں تانگوں اور ٹرکوں کی دنیا میں یہ دوڑ کوئی سنجیدہ شے نہیں اسی لیے پپو جیسا محبتی نام اور یار جیسا بے تکلف لقب استعمال کیا جاتا ہے۔

اور یاد رہے کہ آگے والے رکشے کے سامنے بھی ایک پپو ہے جس کے جذبات اپنے پیچھے آنے والے کے لئے بالکل ویسے ہی ہیں۔ منو بھائی نے ایک بار اس موضوع پر بڑا فلسفیانہ کالم لکھا تھا کہ ہر پپو کے پیچھے بھی ایک پپو لگا ہوتا ہے۔جیسے ہر سچائی کے پیچھے کوئی اور سچائی اور ہر جھوٹ کے پیچھے کوئی اور جھوٹ اسکا تعاقب کرتا ہے۔ دیکھا آپ نے، اسی لئے کہتے ہیں کہ جھوٹ با ت کہنی ہی نہیں چاہئے کیونکہ ایک کو نبھانے کے سو جھوٹ اوربولنا پڑ جاتے ہیں کیونکہ ہر جھوٹ کے پیچھے اسکا پپو یارلپکتا رہتا ہے۔


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:16 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote
ہپ ہپ ہرے

Hip hip hurrah

یہ ایسی اصطلاح ہے جو اردو بولنے والے اکثر سنتے ہیں۔یہ خوشی کے موقعے پر بولے جانے والے الفاظ ہیں ۔ ہمارے کچھ قارئین کو تو1960 کی دہائی کے اواخر میں بننے والی فلم دیور بھابی کا یہ گیت بھی یاد ہوگا جو وحید مراد اور صبیحہ پر فلمایا گیا تھا۔

Three Cheers for Bhabi hip hip hurray

بعض لوگوں کو جب اس ترکیب کا پس منظر بتایا جاتا ہے تو اسکے بعد وہ اسکا استعمال ترک کر دیتے ہیں۔ کچھ لغات کہتی ہیں کہ اس اصطلاح کا پس منظر کسی کو معلوم نہیں۔پہلی مرتبہ یہ ترکیب یعنی1828 ،hep میں زیورِ طبع سے آراستہ ہوئی۔دوسری لغات بھی اپنی سی کہتی ہیں لیکن یہ حروف جو ہیں، خواہ یہ hip, hup, hep میں سے کسی صورت میں بھی نمودار ہوں یہ خوشی کا اظہار کرنے کے کام آتے ہیں۔مارچ اور پریڈ کے سلسلے میں hup two three four آپ نے سنا ہوگا۔ گو یا اگر آپ اسکے ساتھ آہنگ ملا سکتے ہیں تو پھر آپ صحیح جارہے ہیں۔ایسی آوازیں جانوروں کے ریوڑ ہانکنے والے بھی نکالتے ہیں۔کہا جاتا ہے کہ یہ لاطینی کے جملے

Hierusylema Est Perdita, سے نکلا ہے جسکا مطلب ہے یروشلم تباہ ہو چکا ہے۔ اور اس جملے کے پہلے حروف کو ملا کر بنتا ہے hep اور کہتے ہیں کہ قرونِ وسطیٰ میں جب یہودیوں کو ملک بدر کرنا اور سخت سزائیں دینا عام تھا، مخالفین، یہودیوں پر یہ آوازے کسا کرتے اور اس مخفف کو انہیں ستانے اوران کی ہتک کرنے کے لئے استعمال کیا جاتا۔ اگر اس نظریہ پر یقین کر لیا جائے تو پھر hip, hipster, hippie, and hip-hop جیسے ماڈرن الفاظ اور محاورے بھی اسی سے نکلے ہوئے معلوم ہونگے۔خیر یہ تو طے ہے کہ ہمبرگ، فرینکفرٹ اور دوسرے جرمن شہروں میں یہودیوں کو ہراساں کرنے کے لئے یہ الفاظ اتنی کثرت سے استعمال ہوتے کہ ان مظاہروں کا نام ہی hep hep riots رکھ دیا گیا۔کچھ ستم ظریفوں کا یہ خیال بھی ہے کہ یہ الفاظ کسانوں ہی کے ہیں جو وہ جانوروں کی توجہ حاصل کرنے کے لئے حلق سے نکالتے اور دوسروں نے انکا تتبع اسلئے کیا کہ وہ چاہتے تھے کہ یہودیوں کو بھی جانور ہی سمجھا جائے۔

لیکن زیادہ تر محققین اسی نظریہ کے حامی دکھائی دیتے ہیں کہ یہ خوشی کا اظہار کرنے کے لئے حلق سے نکلنے والی آوازوں سے زیادہ کچھ نہیں۔


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:16 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote


کسی کام کو بہت لگن اور محنت سے کرنے کے لئے اردو میں کئی محاورے ہیں مثال کے طورپر انتھک کام، بے تکان، کسی کام کے لئے دن رات ایک کر دینا، ہمارا آج کا محاورہ اسی سلسلے میں ہے:

To Leave No Stone Unturned

یہ بہت عام استعمال ہونے والے الفاظ ہیں اور اردو میں تو اسکا متبادل اتنا دقیق یعنی مشکل ہے کہ عام طور پر لوگ اسے مذاقاََ استعمال کرتے ہیں اور وہ ہے: کوئی دقیقہ فروگذاشت نہ کرنا۔ جب بھی کوئی نئی انجمن وجود میں آتی ہے تو اسکے اغراض ومقاصد میں اکثر یہ درج رہتا ہے کہ فلاں نصب العین کے لئے ہم کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کرینگے۔ تو انگریزی اور اردو دونوں میں اسکا مفہوم بالکل ایک ہی ہے اور وہ ہے کسی مقصد کے حصول کے لئے انتھک کام کرنا۔

یہ محاورہ انگلش میں کیونکر آیا، اسکی تفصیل سنئے: یونان کے معروف ڈرامہ نویس اور قصہ گو Euripides نے ایک بار یہ کہانی بیان کی تھی کہ پرانے زمانے کی بات ہے ایک یونانی جرنیل نے جنگ میں ہارنے کے بعد اپناخزانہ خیمے میں چھپا دیا۔ جب لوگ اس خزانے کو نکالنے کے لئے وہاں پہنچے توا نہیں کچھ نہیں ملا۔چنانچہ وہ ایک نامور عالم کے پاس مشورے کے لئے گئے۔عالم نے کہا: Movere omnem Lepidumجسکا لاطینی زبان میں مطلب ہے، ہر پتھر کو ہٹاؤ۔اسی سے یہ کہاوت وجود میں آئی۔

ایسی ہی صورت میں to move heaven and earth بھی کہتے ہیں ۔ آپ نے اردو میں بھی سنا ہوگا کہ اس کام کے لئے زمین آسمان ایک کر دئے گئے جہاں انگلش میں ہے

putting one's heat and soul in

اسے اردو میں کہیں گے دل و جان سے کوئی کام کرنا


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:17 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote
کادمی


Academy
انگلش کے کچھ الفاظ تو اردو میں ایسے رچ بس گئے ہیں کہ وہ اب اجنبی محسوس ہی نہیں ہوتے جیسے ریلوے، بجٹ، سکول، کالج، یونیورسٹی، پلان، میڈیا، گورنر، اسمبلی، اور بیشمار دوسرے۔ اکیڈمی بھی انہی الفاظ میں شامل ہے۔یہ یونان کے شہر ایتھنزکے مضافات میں رہنے والے ایکاڈی مَس نامی ایک شخص کے نام سے نکلا ہے جس نے اپنے باغات افلاطون جیسے عظیم الشان فلاسفر کو اپنے علی الصبح مباحث اور کانفرنسوں کے لئے دے رکھے تھے اور یہی وجہ ہے کہ اس لفظ کا تعلق علم و ادب سے سمجھا جاتاہے۔ حالانکہ خود اس لفظ کا علم و فضل سے کوئی واسطہ نہیں ہے کیونکہ یہ تو اس آدمی کا نام تھا جو بہت سے باغات کا مالک تھا اور علم دوست تھا۔


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:18 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote
باراک حسین اوباما: لفظ کہانی
عین رے
January 20, 2009
آج لفظ کہانی میں نئے امریکی صدر باراک اوباما کے نام کی تفصیل ملاحظہ فرمائیے

ویسے تو عربی مادے ب ر ک سے گونا گوں الفاظ نکلے ہیں لیکن آپ کی دلچسپی کے لئےمحض چند ایک یہاں درج کر رہی ہوں:

بَرَکَ فعل ہے جس کا مطلب ہے: اونٹ کو بٹھانا

اسی مادے سے البارُوک بھی آیا ہے جس کا مطلب ہے بزدل اور سست اورالبَرّاک بھی جسکا مطلب ہے چکی پیسنے والا۔
بُرکة سفید آبی پرندے کو کہتے ہیں۔
تبرّکَ، کسی سے برکت حاصل کرنا
تبارکَ، نیک شگون لینا
البرکة، بہت سی بھلائی یا برکت

باراک لفظ اسی سے بنا ہے۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ باراک عربی لفظ برکة کی جمع ہے یا پھر اسکا مطلب ہے برکت والا۔ انٹرنیٹ پر بہت سی ویب سائیٹوں نے یہی لکھا ہے۔ لیکن دراصل ایسا نہیں ہے۔ عربی لفظ برکة کی جمع برکاة ہے اور برکت والے کو یا تو بارک کہیں گے یا بہتر اصطلاح میں مبارک۔

تو پھر لفظ باراک کی تشریح کیا ہے؟ خود عربی زبان میں باراک لفظ موجود نہیں ہے۔ یہ دراصل عربی لفظ برکة کی تبدیل شدہ شکل ہے۔ چونکہ صدر اوباما کے والد کینیا کے تھے لہٰذایہ لفظ یقیناًعربی سے سواحلی زبان میں گیا اور وہاں اسکی صورت ایسی ہو گئی۔ آپ نے دیکھا ہوگا کہ الفاظ زبانوں کے مزاج کے حساب سےاپنی ہیئت تبدیل کر لیتے ہیں۔ جیسے داؤد انگریزی میں ڈیوڈ ہے، یوسف جوزف اورعیسیٰ جیِزز ہے جب کہ ہسپانوی میں عیسیٰ کو ہے سوُس کہتے ہیں۔

اب آئیے امریکی صدر کے درمیانی نام کی جانب جو حسین ہے۔ ظاہر ہےیہ اسلامی نام ہے اوریہ عربی لفظ حسن کا اسم ِ تصغیر ہے۔حسن کو مطلب ہے خوبی یا خوبصورتی۔ چنانچہ حسین کا مطلب ہے چھوٹا سا پیارا بچہ اورحسن وخوبی کا مالک۔

اب رہا ان کا خاندانی نام تویہ ان کی آبائی زبان اور تہذیب سے نکلا ہوا لفظ ہے اوران کے قبیلے کا نام ہے۔ البتہ کچھ افغان تفریحاًاوباما سے اپنی قربت یہ کہہ کر ظاہر کرتے ہیں کہ ان کے نام کا مطلب ہی یہی ہے کہ وہ افغانوں کے دوست ہیں۔ دری زبان میں او کا مطلب ہے وہ، با کامطلب ساتھ اور ما کا مطلب ہم یا ہمارے۔ تو اوباما کا مطلب دری زبان میں بنتا ہے، وہ ہمارے ساتھ ہیں
ان کا قبیلہ دھولوُ زبان بولتا ہے۔ اور قبیلے کا اپنا نام لوُاو ہے جو کینیا کے تین اہم ترین قبیلوں میں ایک ہے۔اور اس قبیلے میں اوباما نام بہت عام ہے۔لیکن یہ مسٹر اوباما کےجد امجد کا پہلا نام تھا۔ اگر آپ اس لفظ کی تفصیل بھی معلوم کرنا چاہیں تو سنئے:

او سابقہ یعنی پری فِکس ہے جس کا مطلب انگریزی میں ہوگا، He اور اردو میں وہ آدمی۔ لوُ او قبیلے کے بہت سے آدمیوں کے نام اسی سابقے سے شروع ہوتے ہیں۔ رواج ہے کہ مائیں نومولود بچوں کے ایسے نام رکھتی ہیں جس سے ان کی کوئی خاص بات وابستہ ہو۔ مثلاً اگر کوئی چودھویں کی رات میں پیدا ہو، رمضان میں، یا عید کے روز تو اسی حساب سے اس کا نام ہوگا۔ جب کہ جسمانی ساخت میں اگر کوئی غیر معمولی بات ہے تو نام بھی ویسا ہی ہوگا۔ مثلا آنکھیں اگر سیاہ کے بجائے ہری ہوں یا ہاتھ میں پانچ کی جگہ چھ انگلیاں ہوں تو بھی نام اس کے مطابق رکھا جائے گا۔

او کا مطلب ہم نے دیکھا کہ تذکیر کی جانب اشارہ کرتا ہے۔ بام کامطلب سواحلی میں ہے ٹیڑھا یا ذرا سا مڑا ہوا۔ لہٰذا قیاس یہی کہتا ہے کہ پیدائش کے وقت باراک کے جد امجد کا ہاتھ یا پاؤں شاید مڑا ہوا ہوگا جس کے باعث ان کا یہ نام رکھا گیا۔
اگر ہم اپنی زبان کے حساب سے جائزہ لیں تو ٹیڑھے سے مراد ہوگی بانکا، جو کہ طرح داراورسمارٹ کا مترادف ہے۔ چنانچہ تینوں نام یہ مطالب ادا کریں گے:۔ مبارک، خوبصورت، سمارٹ۔


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:19 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
askari.z55
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 15 Nov 2007
Posts: 1730
Location: UAE

Reply with quote
انگریزی کا سب سے لمبا لفظ
عین رے
واشنگٹن
January 1, 2009
دوحہ قطر سے قمر الزمان نصر بخت نے ایک اور اچھا سوال بھیجا ہے۔ کہتے ہیں Antidisestablishmentarianism کیا سچ مچ استعمال میں آنے والا لفظ ہے یا کسی نے انگریزی زبان کا یہ سب سے لمبا لفظ خود ہی گھڑ لیا ہے۔ اور یہ بھی بتائیے کہ لفظ

Supercalifragilisticexpialidocious بھی کیا اتنا بے معنی جتنا محسوس ہوتا ہے؟

واہ، قمر صاحب کیا اچھا سوال کیا آپ نے۔ بلکہ سوالات ہیں کیونکہ ان دونوں الفاظ کی الگ الگ تشریح کرنا ہوگی۔ سنئے:

پہلا لفظ جو ہے اس کے بارے میں یہ سن کر آپ کو شاید حیرت ہوگی کہ اس کا تعلق عیسائی مذہب سے۔ وہ کیسے؟ وہ یوں کہ صدیوں سے مغرب میں یہ بحث چلی آ رہی ہے کہ مذہب اور سیاست کو ملا دینا چاہئے یا ان دونوں کا آپس میں کوئی تعلق نہ ہونا چاہئے: ہمارے یہاں تو علامہ اقبال نے یہ کہہ کر بحث ختم کر دی کہ:

جدا ہو دیں سیاست سے تو رہ جاتی ہے چنگیزی

لیکن مغرب میں ان دونوں شعبوں کو الگ رکھنے کے شائقین کی تعداد بہت زیادہ تھی۔ اور ان کی اپنے مخالفین سے شدید جنگ رہتی۔ اب لیجئے لفظ Establishment کو، تو اسے سن کر حکومتی اداروں، تجارتی اداروں، بڑی کمپنیوں مثلاََ بنکوں وغیرہ کا خیال آتا ہے۔ یعنی وہ ادارہ جو اصول و ضوابط مرتب کرتا ہے۔

لیکن ایک دو صدی پیشتر انگلستان میں اسکا مفہوم تھا مذہب اور خاصکر حکومتِ وقت سے اسکا تعلق۔ یاد رہے کہ ہنری ہشتم سے پہلے انگلستان کےحاکم یعنی بادشاہ یا ملکہ، چرچ آف انگلینڈ کے سربراہ بھی ہوا کرتے۔ اب یہ بات سمجھ میں آتی ہے کہ disestablishment اس تحریک کا نام ہے جو مذہب اور سیاست کو الگ رکھنے کے حق میں اٹھی۔ اور اس طرحantidisestablishment اس کے رد عمل کے طور پر سامنے آئی اور ان لوگوں کی آواز بنی جو سیاست اور مذہب کو ساتھ چلانا چاہتے۔ برطانوی وزیر ِ اعظم ولیم گلیڈ سٹون نے شاید سمجھا کہ اتنے حروف کافی نہیں ہیں اسلئے انہوں نے اس میں اضافہ کر دیا اور اب مکمل لفظ ہے:

Antidisestablishmentarianism

ظاہر ہے مسٹر گلیڈ سٹون اس تحریک کے یعنی establishment کے حق میں تھے۔ اب یہ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈز میں انگریزی کے طویل ترین لفظ کے طور پر موجود ہے۔ زیادہ تر لوگ اسے سب سے لمبے لفظ کے طور پر یاد کر لیتے ہیں مگر اس کا مفہوم نہیں جانتے۔


_________________
"O son of Adam if you have collected anything in excess of your actual need you will act only as its trustee for someone else to use it.""(Imam Ali(a.s))"
Thu Feb 05, 2009 12:20 am View user's profile Send private message Visit poster's website Yahoo Messenger MSN Messenger
ZSCA
Full PK Member
Full PK Member


Joined: 24 Oct 2009
Posts: 484
Location: PAKISTAN

Reply with quote
thanx for nice sharing

_________________
I WOULD LIKE TO MARTYRE IN GHAZWAE HIND,
MERE ALLAH NE MUJHEY BUHAT KUCH DIYA HAI....,
AGAR MUJHEY APNI OQAAT KE BRABAR MILTA TOU KUCH NA MILTA....!
BRASSTACKS
Thu Nov 26, 2009 3:20 am View user's profile Send private message
Display posts from previous:    
Reply to topic    Forum Pakistan - Pakistani Forums Home » Stories & Quotes All times are GMT + 5 Hours
Page 1 of 1

 
Gupshup Forum: Urdu ForumIslam ForumPakistan Army ForumAap Ka SheharNaukaryPakistani Visa
Desi Sports and News: Live CricketSports ForumAkhbar OnlinePakistan EventsWorld News Discussion
Entertainment Media: PTV ForumGEO ForumLollywood ForumBollywood OnlineHollywood ForumDesi Radio
Desi Masala Forums: Gupshup Chit ChatComputer GamesMusic ForumDrama ForumsGhazal ForumDesi FashionDesi Food
Official Forums (Government Department): Dak Khana ChatPolice ForumWapda OnlinePTCL ForumUfone ForumRailway ForumSehat Chit ChatTaleem OnlineTax Forum PKZameen ForumAdalat Forum


Pure Pakistani forum to express your views, thoughts with complete freedom. Archives 1 2

Copyright © ForumPakistan.com.pk 2017 All rights reserved.

Contact Us | Advertise | Report Abuse | FP Team | Disclaimer