Forum Pakistan
New User? Register | Search | Memberlist | Log in
Forum Pakistan - Pakistani Forums
Pakistani forum to discuss Pakistani Media, Siasat, Politics Talk Shows, Khaber Akhbar, Khel, Cricket, Film, Dramas, Songs, Videos, Shairy, Shayari, Pyar Mohabbat ki Kahani, Tourism, Hotels, Fashion, Property, Naukary Gupshup and more.
Watch TV OnlineLive RadioListen QuranAkhbarFree SMS PakistanResults OnlineUrdu EditorLollywoodLive Cricket Score
Government DepartmentsKSE Live RatesUseful LinksJobsOnline GamesCheck EmailPromote us
GEO News LiveGEO NewsDawn News Live TVExpress News

ForumPakistan.com

Bookmark site!


Haseena ki Asal haqeqat(must read)


Bookmark and Share
 
Reply to topic    Forum Pakistan - Pakistani Forums Home » Desi Stories
Haseena ki Asal haqeqat(must read)
Author Message
Imama Nadeem
Senior Proud Pakistani
Senior Proud Pakistani


Joined: 10 Jun 2016
Posts: 1539

Haseena ki Asal haqeqat(must read)
Haseena ki Asal haqeqat(must read)
حسینہ کی اصل حقیقت کیا تھی؟

کسان نوجوان اپنے کھیت میں کام کر رھا تھا....
ایک نسوانی قہقہے سے وہ چونک گیا..
ایسی حسینہ تو اس نے زندگی بھر نہ دیکھی تھی
وہ اس کی طرف بڑھا چلا گیا,,, وہ بھی مسکرا رھی تھی..... میرے ساتھ گھر چلو گی ؟ وہ بلا جھجھک اس کے ساتھ ھو لی.. .وہ فضاؤں میں اڑنے لگا
چوھدری کا ڈیرہ آباد تھا دوست احباب کے مجمع میں,, نوکر چاکر خدمت کے لئے کھڑے ھوئے...
چوھدری جی!! چوھدری جی!! اُس کا خادمِ خاص ڈیرے میں ھانپتا کانپتا داخل ھوا...
خیر تو ھے ؟ خیر تو ھے ؟
او جی خیر کہاں.!! میں چوک میں کھڑا تھا , نورے جٹ کا جوان لڑکا
ایک ایسی حسینہ کے ساتھ گزر کے گھر جارھا تھا کہ اس جیسی زندگی میں نہ دیکھی ,, نامعلوم کہاں سے لے کر آیا ھے... چاند کا ٹکڑا ھے. چوھدری جی
اسے سمجھ. نہیں آرھا تھا کہ اسے کہاں بٹھاؤں...
آج اس کی زندگی کا بہترین دن تھا ,, اس نے تو کبھی سوچا بھی نہ تھا.. واقعی جب خدا دیتا ھے تو چھپر پھاڑ کے دیتا ھے ...
اسے کچھ شور کی آواز آرھی تھی جو اور قریب آگئی..... پھر دروازہ کھٹکھٹایا جانے لگا
دروازہ کھلا...
چوھدری ھکا بکا رہ گیا... اور بے اختیار اس حسینہ کی طرف بڑھا...
نوجوان جٹ ایک آھنی دیوار کی طرح اس کے راستے میں حائل ھو گیا....
تم میری لاش پر سے گزر کر ھی اس تک پہنچ پاؤ گے...
تم اس کے قابل نہیں... نہ یہ گھر اس کے قابل ھے...
یہ میری حویلی میں رھے گی. , نوکرانیاں., راحت., آرام., عزّت,, اسے وھاں ملے گی...
نہیں یہ فیصلہ جج کی عدالت میں جائے گا
عدالت پورے جوبن پر تھی... سائل, مدعی, وکلاء , اھلکار., عملہ سب موجود تھے., جج صاحب. اپنی مسند ِخاص.پر رونق افروز....
جج صاحب نے نظر آٹھائی اسے اپنی نظروں پر یقین نہیں آرھا تھا... اس نے عینک اتار کر صاف کی اور دوبارہ دیکھا... واقعی وہ حور اس کے سامنے کھڑی تھی
جج بولا ارے یہ منہ اور مسور کی دال اپنی اوقات دیکھو اور اس کا حسن یہ تم دونوں کے لائق نہیں میرے پاس مال و دولت ھے عہدہ ھے بنگلے ہیں گاڑیاں ہیں نوکر چاکر معاشرے میں ایک حیثیت ھے یہ میرے لائق ھے چلو نکلو تم دونوں اور اس کو یہیں رہنے دو وہ ہکّے بکّے رہ گئے نہیں چوہدری چلایا یہ نہیں ہوسکتا نوجوان بولا ہم راضی نہیں ہیں اب تو بادشاہ سلامت ہی ہمارے درمیان فیصلہ کریں گے بادشاہ کے پاس چلو جج نے سب کام وہیں چھوڑے اور اب تینوں حسینہ کو ساتھ لئے بادشاہ کے محل کی طرف بڑھنے لگے
دربار سجا ہوا تھا وزیر مشیر درباری سب اپنی اپنی مسندوں پر اور بادشاہ اپنے تخت پر جلوہ افروز تھا اسکے سر پر رکھے ہوئے تاج کے موتیوں سے سارا دربار جگمگا رہا تھا اور وہ خود بھی حسن کا کرشمہ تھا دربان تین اشخاص اور ایک حسینہ کو لا کر بادشاہ کے سامنے پیش کرتا ھے بادشاہ سلامت نے نظر اٹھائی تو دیکھتا کا دیکھتا ہی رہ گیا ایسی حسینہ اور میری سلطنت میں اس نے حکم دیا کہ ان تینوں کو ایک طرف لے جاؤ اور حسینہ کو میرے محل میں لے جاؤ جج صاحب نے کچھ بولنے کی کوشش کی تو بادشاہ سلامت نے ایک طرف دیکھا تین ہٹے کٹے دربان آگے بڑھے اور تینوں خاموشی سے ایک طرف کو ہو گئے وہ حسینہ جو اب تک خاموش تھی اس نے خاموشی کو توڑا اور بولی فیصلہ میں کروں گی تم چاروں میرے پیچھے دوڑو جو مجھے پکڑ لے گا میں اس کی یہ کہہ کر وہ جلدی سے دربار سے باہر نکلتی ہوئی نظر آئی بادشاہ کو اپنا تخت بھول گیا اور اگلے ہی۔لمحے وہ چاروں اس کے پیچھے دوڑ رھے تھے وہ ہوا سے باتیں کررہی تھی بادشاہ سلامت تھوڑی ہی دور جاکر دوڑنے کی تاب نہ لاسکے اور ایک لمبی آہ بھر کر وہیں ڈھیر ہو گئے
جج صاحب بھی زیادہ دیر پیچھا نہ کرسکے اور اسکی سانسیں بھی جواب دے گئیں چوھدری صاحب ہمت ہارنے والے تو نہ تھے لیکن آخر کب تک اب وہ تھی اور نوجون تھا جو کہ ہر لمحے اس کے قریب سے قریب تر ہوتا جارہا تھا مگر یہ کیا راستے کے ایک پتھر سے وہ ایسا ٹکرایا کہ منہ کہ بل گرا اور اسکے منہ سے ایک دل خراش چینج بلند ہوئی جو کہ حسینہ کے قہقہوں میں دب گئی
آؤ میرے عاشقو میرے پیچھے آؤ تم مجھے کبھی نہیں پاسکتے اور واقعی ہی اسے کوئی نہ پاسکا کہ وہ دیکھنے میں تو حسینہ تھی حور کے حسن والی تھی دل فریب تھی عقل کو محو کرنے والی تھی لیکن حقیقت میں وہ دنیا تھی اسکے پیچھے دوڑنے والوں کا یہی انجام ہوتا ھے-

Sat Mar 04, 2017 12:12 pm View user's profile Send private message
Display posts from previous:    
Reply to topic    Forum Pakistan - Pakistani Forums Home » Desi Stories All times are GMT + 5 Hours
Page 1 of 1

 
Gupshup Forum: Urdu ForumIslam ForumPakistan Army ForumAap Ka SheharNaukaryPakistani Visa
Desi Sports and News: Live CricketSports ForumAkhbar OnlinePakistan EventsWorld News Discussion
Entertainment Media: PTV ForumGEO ForumLollywood ForumBollywood OnlineHollywood ForumDesi Radio
Desi Masala Forums: Gupshup Chit ChatComputer GamesMusic ForumDrama ForumsGhazal ForumDesi FashionDesi Food
Official Forums (Government Department): Dak Khana ChatPolice ForumWapda OnlinePTCL ForumUfone ForumRailway ForumSehat Chit ChatTaleem OnlineTax Forum PKZameen ForumAdalat Forum


Pure Pakistani forum to express your views, thoughts with complete freedom. Archives 1 2

Copyright © ForumPakistan.com.pk 2017 All rights reserved.

Contact Us | Advertise | Report Abuse | FP Team | Disclaimer